پاکستان نے اپنی بندرگاہیں استعمال کرنے کی پیشکش کر دی.

by easy search on 18-09-2015 in

بیجنگ: زمینی راستے سے دوطرفہ تجارت خشکی میں گھر ے ہوئے ملکوں کیلئے بڑی اہمیت کے حامل ہیں، پاک چین اقتصادی راہداری ایک پٹی اور ایک شاہراہ کی چھتری کے نیچے ایک تاریخی اقدام ہے،وزیر تجارت خرم دستگیر کا شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ممالک کے وزرائے تجارت کے اجلاس سے خطاب. پاکستان نے ایس سی اوکے رکن ممالک کو اپنی بندرگاہیں استعمال کرنے کی پیشکش کر دی۔یہ پیشکش وفاقی وزیر تجارت خرم دستگیر نے چین کے شہر ژیان میں شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کی ہے۔انھوں نے کہا کہ ایس سی کے رکن ممالک چین پاکستان اقتصادی راہداری کی تکمیل کے بعد اپنی تجارت کے فروغ کے لئے پاکستانی بندرگاہوں سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں، پاک چین اقتصادی راہداری ایک پٹی اور ایک شاہراہ کی چھتری کے نیچے ایک تاریخی اقدام ہے، اور یہ کاشغر اور گوادر کے درمیان تجارتی مراکز کو ایک دوسرے سے ملائے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تجارتی پالیسی اور حکمت عملی میں ہمسایہ ملکوں سے روابط اور باہمی تجارت کے فروغ کے اقدامات پرخصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف کے رابطوں کے ذریعے مشترکہ خوشحالی کے ویژن کے مطابق ہم نے کئی اہم اقدامات اٹھائے ہیں جن میں چین کرغزستان ، قازخستان اور پاکستان کے درمیان تجارتی نقل وحمل کے لئے چار فریقی معاہدے کی بحالی شامل ہے۔

Leave a Comment